TOP

شام تک قید رہا کرتے ہیں دِل کے اندر


شام تک قید رہا کرتے ہیں دِل کے اندر
درد ہو جاتے ہیں سارے ہی رِہا شام کے بعد

0 comments:

Post a Comment