TOP

جو کبھی کہہ سکا نہ کہنے دے


جو کبھی کہہ سکا نہ کہنے دے
آج لفظوں سے خون بہنے دے 


اب کوئی اور بات کر مجھ سے
یہ فراق و وصال رہنے دے 

ایک ہی جیسے رات دن کب تک
کوئی تازہ عذاب سہنے دے 

جن کی خوشبو نہ وقت چھین سکے
ایسے کلیوں کے مجھ کو گہنے دے

0 comments:

Post a Comment