TOP

تیری یادوں سے کیا نہیں سیکھا



تیری یادوں سے کیا نہیں سیکھا

بے سبب تو نہیں تھی تیری یادیں

تیری یادوں سے کیا نہیں سیکھا

ظبط کا حو صلـ بڑھا لینا

آنسوؤں کو کہیں چھپا لینا

کانپتی ڈولتی صداؤں کو

چپ کی چادر سے ڈھانپ کر رکھنا

بے سبب بھی کبھی کبھی ہسنا

جب بھی بات ھو تلخی کی

موضوع گفتگو بدل دینا

بے سبب تو نہیں تیری یادیں!

0 comments:

Post a Comment